منیر انکوائری رپورٹ

 منیر انکوا ئری رپورٹ

                1953ء میں پاکستان میں احمدیو ں کے خلا ف ملک گیر فسادات نے جنم لیا۔جما عت احمدیہ سے تعلق رکھنے والے افراد کے گھروں اوردکا نو ں کا جلا ؤ گھیراؤ کیا گیا اور کئی احمدیو ں کو شہید کیا گیا۔ان فسا دات کا باعث یہ ہوا کہ پاکستان کے بعض علما ء کی طرف سے حکو مت سے مطا لبہ کیا گیا کہ ایک ما ہ کے اندر اندر احمدیوں کو غیر مسلم اقلیت قرار دیا جائے اور اس کے ساتھ احمدیوں کو کلیدی عہدوں سے بر طرف کیا جا ئے اور اگر ان کے مطا لبہ کو تسلیم نہ کیا گیا تو ’’راست اقدام‘‘ کیا جائے گا۔چنا نچہ جب حکو مت پاکستان کی طرف سے ان کا مطالبہ تسلیم نہ کیا گیا تو احمدیو ں کے خلاف فسا دات کو ہوا دی گئی۔

             حکومت پاکستا ن کی طرف سے بعد ازیں ایک بینچ قائم کیا گیا جس کی قیا دت جسٹس منیر نے کی اور ایک رپورٹ مرتب کی جو Report of the court of inquiry کے نام سے سامنے آئی۔

              اس رپورٹ میں حیرت انگیز انکشا ف  سامنے آیا کہ جب علماء سے مسلما ن کی تعریف پوچھی گئی تو علما ء میں سے کوئی دو بھی ایک تعریف پر متفق نہ تھے۔اس رپورٹ میں ایک یہ نتیجہ بھی سامنے آیا کہ احرار ابتدا ء سے ہی قیام پاکستان کے خلاف تھے۔

رپورٹ پڑھنے کے لئے یہاں کلک کریں (اردو زبان)

رپورٹ پڑھنے کے لئے یہاں کلک کریں(انگریزی زبان )